Circle Image

سید ثاقب الحسن صائبؔ۔

@syedsaqibulhassansaiib

زندانِ شام کے در و دیوار روتے ہیں
آواز سسکیوں کی سنی جان کھوتے ہیں
دل پاش پاش اہلِ حرم کے بھی ہوتے ہیں
اُمِ رباب کہتی ہیں رو کے حزینہ سے
ملنے ضرور آتے ہیں بابا سکینہ سے
زانوں پہ سر کو رکھ کہ چھپایا ہے چہرے کو

0
3
رو روکے بیاں کرتی تھی یہ فاطمہ صغرٰی
گھر آو خدارا
حجروں میں نظر آتا ہے ہر ایک کا سایہ
گھر آو خدارا
تنہا جو مجھے چھوڑ کے کربل میں بسے ہو
کیا بھول گئے ہو

5
غازی کو چوم چوم کے کہتے ہیں یہ حسین
ملتا ہے اس کو دیکھ کے بابا جو مجھ کو چین
شمس و قمر جیسےہیں دونوں ہی اس کے عین
روشن جبیں ہے بابا کے جیسے ہیں اسکے نین
شرماتا ہے مہتاب بھی اس نورِ قمر سے
روشن ہوا ہے جہاں بھی حیدر کے پسر سے۔

3
ثقیل وقت ہے کیوں کوئی انتشار کرو
امامِ وقت کے آنے کا انتظار کرو
گرایا بنتِ نبی کا مزار سعودی نے
انھیں روانہ ذرا آکے سوئے نار کرو
شکم کو بھرتے ہو تم آتشِ جہنَم سے
عزا کے نام پہ ایسا نہ کاروبار کرو

0
2
فرشِ عزا پے ہوتی جو قائم نماز ہے
خالص عبادتوں کا یہ پوشیدہ راز ہے
روشن بھی زندگی کا جو رافع مقام ہے
ملبوس میرا خاکی حسینی طراز ہے
بغضِ علی میں تیرا تو جینا حرام ہے
ساری عبادتوں کا علی ہی جواز ہے

0
3
بابا کے جنازے پہ تھی زینب کی یہ فریاد
اماں کے بعد گھر بھی تھا تم سے ہی تو آباد
اک تیغِ جفا نے کیا ہم سب کو ہے برباد
آنکھیں تو ذرا کھولو، کرو پھر کوئی ارشاد
اکیسویں رمضان میں سرخی جو چھائی ہے
حیدر کے جنازے پر زینب جو آئی ہے

5
عرشِّ بریں کا مان ہے قُم کی زمین پر
مولا رضا کی جان ہے قُم کی زمین پر
فتوے عزاء پہ کہتے ہیں ان لوگو کیلئے
تلوار بے میان ہے قُم کی زمین پر
دینِ خدا کو بیچنے والوں کا ہے ہجوم
ہو بند جو دکان ہے قُم کی زمین پر

0
4
گستاخِ محمد کو شیطان کہا جائے
بد بخت امیہ ہے فی النار کیا جائے
سنت پہ عمل پیرا ہم فاتحِ خیبر کی
اس دور کے مرحب سےکھل کربھی لڑا جائے
کردارِ رسالت پر انگلی جو اٹھاتا ہے
سر تن سے جدا اسکا بر وقت کیا جائے

0
2
زمانے بھر کیلئے آج بھی چٹان ہیں ہم
سخنوران ہیں اردو ادب کی جان ہیں ہم
عزاء کے دشمنو! تم جان لو یہ اچھے سے
شہید ہونا وراثت تو اس کی شان ہیں ہم
زبان عشقِ علی میں کٹی جو دار پہ تھی
خدا کا شکر ہے رکھتے وہی زبان ہیں ہم

0
8
ہیں اسطرح سے مظھرِ ذاتِ خدا حسن
زہرا کا نور عین دلِ مرتضی حسن
عرش و زمیں پے نور ہےاُنکے ہی نور سے
آخر ہیں کائنات کے جو پیشوا حسن
ہےمل گئی نجات مجھے فرطِ غم سے آج
حیدر ہیں بابِ علم تو مشکل کشاء حسن

0
1
حمدِ خدا کے بعد بیاں مصطفٰے کا ہے
ولیوں میں کتنا نام علی مرتضیٰ کا ہے
زہرا بتول مرضیہ از را و طاہرہ
خیر النساء بھی خاص لقب فاطمہ کا ہے
القاب جن کے سید و سبطِ تقی زکی
مشہورِ دھر نام حسن مجتبی کا ہے

0
6
شمس و قمر بھی پاتے ہیں آلِ عبا کا نور
جلوہ فگن ہوا ہے زمیں پر رضا کا نور
عرشِ بریں سے اترا خدا کا جو ہے یہ نور
ہاتھوں پہ نجمہ لاتی ہیں نورِ خدا کا نور
زہرا علی و شبر و شبیر کی ہے زین
انوار سے ہی ان کے ہے جود و سخا کا نور

4
روکِ نہ رُک سکے گا یہ ماتم حسین کا
کربل میں خوں کا بہتا ہے زمزم حسین کا
جسموں سے اپنے خون کے چشمے نکال کر
انصار رن میں بھرتے رہے دم حسین کا
کفار کی شکست ہے اور جیت دین کی
ہونے خدا نے سر نہ دیا خَم حسین کا

5