Circle Image

شاہ رئیس شمالی

@shaw

تیرے حُسنِ میں کھو کر پاگل
تیرے عشقِ میں ہو کر پاگل
تیرا ہی بس لیتا ہے نام
ہنستے ہنستے رو کر پاگل

0
5
تم حسن کا محور ہو، تم حُسن کا پیمانہ
تیرا نہیں ہے ثانی، تو گوہرِ یک دانہ
تم شمع فروزاں ہو، تم شعلہ آتش ہو
جل جاے گا بس یوں ہی بیکارِ میں پروانہ
چہرے کو چھپا لینا تم زلف مسلسل سے
رخسارِ کے شعلے سے جل جاے نہ دیوانہ

3
48
تتلیاں پھر لوٹ آئیں ہیں بتا دینا اُسے
نو بہاری کی خبر پھر سے سنا دینا اُسے
کونپلیں بھی پھوٹ آئی ہیں گُلِ بادام پر
پھول بھی کھلنے لگے ہیں تم دکھا دینا اسے
چاندنی راتوں میں پریاں بھی اُترتی تھیں یہاں
اب نہیں آتیں ہیں پریاں یہ بتا دینا اُسے

2
37
اداس آنکھیں غزال آنکھیں
جواب آنکھیں سوال آنکھیں
عطا کی رب نے کمال آنکھیں
ہلال آنکھیں نہال آنکھیں
دلوں پہ لگتی ہیں تیر بن کر
"خدا کے بندے سنبھال آنکھیں"

26
وقتِِ کے ساتھ کئی یار بدل جاتے ہیں
دل بدل جاتے ہیں دلدارِ بدل جاتے ہیں
یہ ہے دنیا اسے رہنا ہے رواں اور دواں
ہاں مگر وقت کے معیار بدل جاتے ہیں
تم بدل جاؤ گے تقدیرِ بدل جائے گی
حُسن کردار سے اقدارِ بدل جاتے ہیں

29
چاند تاروں کی قسم پھول اور خوشبو کی قسم
نجد کے دشت و جبل اور رمِ آہو کی قسم
چاند سے بڑھ کے ہے روشن تو اے زُہرہ جبیں
سرو کی لالہ و گُل اور ترے گیسو کی قسم

0
13
سامنے جب تم کھڑے ہو یہ نظارے سب فضول
پھول و خوشبو مسترد ہیں، اور شرارے سب فضول
باغ میں دلدار نکلے جب ٹہلنے کے لئے
حور و غلمان اور پریاں استعارے سب فضول
سورہِ یوسف میں چرچا حُسن یوسف کی قسم
چاندنی میں جگمگاتے چاند تارے سب فضول

21
آنکھوں سے اپنی آگ لگا دو کبھی کبھی
باتوں سے اپنی پھول کھلا دو کبھی کبھی
منت بھی ہے سوال بھی اورالتجا بھی ہے
مسکانِ تم لبوں پہ سجھا دو کبھی کبھی
بیٹھے ہیں تیری راہ میں آنکھیں بچھا کے ہم
ہم سے ملا کے ہاتھ دبا دو کبھی کبھی

0
35
تو مجھے زہر لگتی تو اچھا تھا
تُجھے کھا کر ہلاک ہو جاتا
"تجھ پہ مرنے سے بہتر تھا"
آگ میں جل کے خاک ہو جاتا

0
1
60