سامنے جب تم کھڑے ہو یہ نظارے سب فضول
پھول و خوشبو مسترد ہیں، اور شرارے سب فضول
باغ میں دلدار نکلے جب ٹہلنے کے لئے
حور و غلمان اور پریاں استعارے سب فضول
سورہِ یوسف میں چرچا حُسن یوسف کی قسم
چاندنی میں جگمگاتے چاند تارے سب فضول
تو سراپا حُسن محکم ، حُسن فطرت کا کمال
خوبصورت، نیک سیرت حُسنِ والے سب فضول
اس کو دیکھو خود سراپا آئنے میں تم رئیس
سرو قد اور لالہ رُخ کے ہیں اشارے سب فضول

84