Circle Image

اسلام شکارپوری

@islamshikarpuri

جو دل پہ کیا اس نے بھولے ہی کہاں ہیں ہم
ہر زخم یہ کہتا ہے اس دل میں جواں ہیں ہم
ہستی یہ ہماری بھی بس ایک تلاطم ہے
ٹھہرے نہ کہیں پر جو وہ موجِ رواں ہیں ہم
در بند نہیں ہوتے انساں کی تمنا کے
دل ہے یہ وہ ہی اپنا اب تک بھی جواں ہیں ہم

0
2
ہر سمت تباہی ہے جلتی ہیں چتایں اب
ہر دل یہاں روتا ہے یہ کس کو بتایں اب
اس ملک کے رہبر بھی مصروف رہے خود میں
انسان کو ڈستی ہیں زہریلی ہوایں اب
اس دور میں انساں کی لاشوں پہ سیاست ہے
منصف بھی نہیں دیتے قاتل کو سزایں اب

0
2
ہر سمت تباہی ہے جلتی ہیں چتایں اب
ہر دل یہاں روتا ہے یہ کس کو بتایں اب
اس ملک کے رہبر بھی مصروف رہے خود میں
انسان کو ڈستی ہیں زہریلی ہوایں اب
اس دور میں انساں کی لاشوں پہ سیاست ہے
منصف بھی نہیں دیتے قاتل کو سزایں اب

0
3
یہ دل ہے پریشاں اب اس شوخ کی الفت سے
کرتا ہی نہیں ہم سے وہ بات بھی عزت سے
ہر بات میں دھوکا ہے بس نامِ محبت ہے
ہم خوب ہی واکف ہیں اس تیری محبت سے
کہتے ہیں جو ہم سے وہ دیکھو نہ کبھی ان کو
واکف ہی نہیں ہیں وہ آکھوں کی لطافت سے

0
1
9
یہ دل ہے پریشاں اب اس شوخ کی الفت سے
کرتا ہی نہیں ہم سے وہ بات بھی عزت سے
ہر بات میں دھوکا ہے بس نامِ محبت ہے
ہم خوب ہی واکف ہیں اس تیری محبت سے
کہتے ہیں جو ہم سے وہ دیکھو نہ کبھی ان کو
واکف ہی نہیں ہیں وہ آکھوں کی لطافت سے

0
1
یہ دل ہے پریشاں اب اس شوخ کی الفت سے
کرتا ہی نہیں ہم سے وہ بات بھی عزت سے
ہر بات میں دھوکا ہے بس نامِ محبت ہے
ہم خوب ہی واکف ہیں اس تیری محبت سے
کہتے ہیں جو ہم سے وہ دیکھو نہ کبھی ان کو
واکف ہی نہیں ہیں وہ آکھوں کی لطافت سے

0
1
گھبرا نہ تو اب اے دل غم کا جو اندھیرا ہے
ہر رات کے پردے میں خوشیوں کا سویرا ہے
ہر دور سے گزرے ہیں پہچانا زمانے کو
ہے ہاتھ اگر خالی کویء نہیں تیرا ہے
پتے بھی نہیں رہتے اس پیڑ کی شاخوں پر
موسم نے خزاں کے ہی جس پیڑ کو گھیرا ہے

0
3
گھبرا نہ تو اب اے دل غم کا جو اندھیرا ہے
ہر رات کے پردے میں خوشیوں کا سویرا ہے
ہر دور سے گزرے ہیں پہچانا زمانے کو
ہے ہاتھ اگر خالی کویء نہیں تیرا ہے
پتے بھی نہیں رہتے اس پیڑ کی شاخوں پر
موسم نے خزاں کے ہی جس پیڑ کو گھیرا ہے

0
1
بدلے میں وفا کے اب ملتی یہ جفا کیوں ہے
اس دور میں دنیا کی ایسی یہ ہوا کیوں ہے
کرتا وہ جفایں ہے دل ہو گیا ہے پتھر
پھر سارے زمانے سے اس کی یہ وفا کیوں ہے
الفت سے یہاں بڑھ کر کچھ اور نہیں ہے جب
اس جرمِ محبت کی دنیا میں سزا کیوں ہے

0
9