Circle Image

Rahmat Ali

@RahmatAli

بزم ہستی میں مجھے بھی آنے دو
میں ہوں پروانہ مجھےجل جانے دو

0
2
کچھ رنجش ہے تلخ سی اے زندگی سن
ہے نا کوئی مراسم اے زندگی سن
ٹھہرو گی جب بشرِ خدا دیکھ کہ تم
ہوگا پھر غلبہ اجل اے زندگی سن
بچھڑے تجھ سے چاہنے والے تیرے
ملا تجھے بھی تو دغا اے زندگی سن

0
25
کسی مکیں کی لگتا داستان ہے
یہ دل مِرا عجب ہی گلستان ہے
ہے اس میں کئ رنگ پھول کانٹے بھی
خدا بھی اِس پہ کتنا مہربان ہے
نہیں ہے اس میں گر صفت رحیم کی
تو پھر یہ گوشئہ چمن بھی ویراں ہے

0
26
جب بچھڑیں تو یادیں رہ جاتی ہیں
کچھ ادھوری باتیں رہ جاتی ہیں
چھپے جب بھی محبّت کا سورج
شامیں نفرت کی رہ جاتی ہیں
کچھ خواب سجائے آنکھوں میں
کچھ حسرتیں دل کی رہ جاتی ہیں

0
44
کچھ بھی ہوتا نہیں ابہام
رات دن آتے ہیں پیغام
دل بے کراں میں سلگا کر
خود ہو جاتے ہیں گمنام
اے دردِ دل سر اٹھا
ناداں لگاتے ہیں الزام

0
29
تمناء حیات مرس رہی ہے
تم سے ملنے کو ترس رہی ہے
ِمرا حال اب مخفی نا رہے گا
خاموشی مجھ کو جرس رہی ہے
رنجیدہ دل بھی چھید ہوا
اب یاد رگوں میں رس رہی ہے

0
60
کچھ یادوں میں آج کی شام گزارتے ہیں
بے سدھ کر کے خود کو پھر سنبھالتے ہیں
 ہم کو تو پہلے بھی میسر نہیں تھی راحت
 چل اب کی شب تیرا نام پکارتے ہیں 
لمحہ بہ لمحہ تُو پاس ہے ہجر نہیں معلوم 
کہتی یہ شعر ہی تیری بات نکھارتے ہیں

0
55
کیوں طبیعت یہ بِےزار ہے
آنکھ بھی اشکوں کا ہار ہے
لگتی یہ دلکشاں تھی کبھی
زندگی جو بہت کانٹ دار ہے
پھولوں سے یہ گٙھر کو سجاۓ
پھر بتائے اسے نار ہے

46
میرےسُلگتے دل سے اک صدا آ رہی ہے
زندہ ضمیر ہے تیرا مجھ کو بتا رہی ہے
اٹھ غفل و ناداں اور سن یہ راز تو بھی
جو آہٹ مخلوق خدا سے آ رہی ہے
اور چھپی ان میں قدرت کو بھی دیکھو
رنگ بدل کے ہمیں آزماۓ جا رہی ہے

74
                             " لال كنیر"                 لال كنیر، آپ میں سے اکثر  اس نام کو جانتے ہونگے اور چند ایک ایسے بھی ہونگے جو اس نام سے پہلی دفعہ واقف ہوے ہونگے ۔چونکہ اللّه نے انسان کی تخلیق کے ساتھ ساتھ اسے اور بھی بہت ساری نعمتوں سے نوازا ہے اور ایسی ایسی نعمتیں عطاء کی ہیں کہ انسان ششدر رہ جاتا ہے ۔اللّه نے کائنات کو خوبصورت بنانے کے لئے بہت سے رنگ بکھیرے ہیں۔اگر زمین کو ہی دیکھا جائے تو ایسے ایسے رنگ نظر آے گے، ایسی ایسی  چیزیں نظر آے گی بظاھر تو وه ایک دوسرے سے مختلف ہونگی لیکن ایک جھلک ایسی بھی ہوگی جو سب میں آپکو یکساں نظر آے گی وہ جھلک قدرت کی جھلک ہوگی۔کہنے والے کہتے ہیں کے یہ جھلک نصیب والو کو نظر آتی ہے۔اگر آپکو یہ       جھلک نظر آ رہی ہے تو آپ بڑے نصیب والے ہیں۔زمین کو اگر ایک باغ کی مانند سمجھا جائے تو باغ کا سب سے خوب صورت ترین پودا انسان ہے اور بھی بہت سارے پودے ہیں جڑی بوٹیاں ہیں  کچھ زہریلی ہیں جنکو ہم (  كنیر )کہتے

0
50
اٹھ لا علم دن یونہی ڈھلتے ہیں
باندھ رخت، اب گھر کو چلتے ہیں
نا رہے گا قُرب، آشْناؤں میں
ہے دنائی یہ اب سنبھلتے ہیں
کر کے ورد تیرے ہی نام کے
باغِ سحر میں پھول کِھلتے ہیں

79