Circle Image

Hammad Younus

@Hammad96

ہمارا خواب سے رِشتہ بہت پرانا ہے
ہمارے در پہ اُمَنگوں کا آستانہ ہے
نظر سے دُور کہِیں برق گِرتی جاتی ہے
نہیں خبَر کہ قفَس ہے یا آشیانہ ہے
اُفق کے پار سے آیا ہے کوئی سندیسہ
فقَط یہ یاد دِہانی ، کہ لوٹ آنا ہے

0
1
31
مَیں تو سقراط نہیں
کِس لِیے زِہر پِیوں
کِس لیے فرشی خداؤں کا کروں مَیں اِنکار
کیسے اِنکار کا اِقرار کروں
نہ مَیں یحییٰؑ ہوں کہ ہیروڈ سے ٹکرا جاؤں
حق کروں حق کا ادا، حق ہی پُکارا جاؤں

4
42
ختم بس اب سائباں ہونے کو ہے
خواب کا منظر دھواں ہونے کو ہے
ہم بچھڑ جائیں گے اگلے موڑ پر
یہ سفر تو رائیگاں ہونے کو ہے
اک جہاں کا فاصلہ حائل ہے بِیچ
اب بھی تُو محبوبِ جاں ہونے کو ہے!!!

0
1
40
زندگی کیا ، سوال سا ہے کچھ؟؟
ایک سانسوں کا جال سا ہے کچھ
تیرے ہونٹوں پہ ہے ہنسی کیسی
تُو بھی غم سے نڈھال سا ہے کچھ؟
اس نے دیکھا ہے، پر نہیں دیکھا
دل کو میرے ملال سا ہے کچھ

0
22