Circle Image

احمد علی خان

@Abulhassanrizvi1

خدا کے نام پہ اس کو بھی بخش دوں گا میں
جو میرے قتل کی سازش ہزار بار کرے
خدا بہشت میں ساتھی اسے مرا کرنا
جو میرے قتل کی کوشش بے اختیار کرے
خدا اسے نہ زمانے کا کوئی غم پہنچے
کہ جس کے ہاتھ کی گولی مرا شکار کرے

0
1
35
یومِ تجدیدِ وفا پر حامیانِ انجمن
یاد پھر سے سب کرو روشن پیامِ انجمن
متفق ہو کار کن ہو یا ہو رکنِ انجمن
مل کے سب آگے چلاؤ کاروانِ انجمن
تم سے باقی ہے یہاں دینِ مبیں کی آبرو
پاک دل روشن جبیں ہر اک جوانِ انجمن

0
24
یومِ تجدیدِ وفا پر حامیانِ انجمن
یاد پھر سے سب کرو روشن پیامِ انجمن
متفق ہو کار کن ہو یا ہو رکنِ انجمن
مل کے سب آگے چلاؤ کاروانِ انجمن
تم سے باقی ہے یہاں دینِ مبیں کی آبرو
پاک دل روشن جبیں ہر اک جوانِ انجمن

0
41
خدا کے نام پہ منہ کو بگاڑتا ہے کوئی
کسی غریب کی دنیا سنوارتا ہے کوئی
خدا کے نام سے ہی زندگی سلامت ہے
خدا کا نام جو بھولا تو اک قیامت ہے
خدا کا نام ہی دھڑکن کی آس ہوتا ہے
خدا کا نام ہی مفلس کے پاس ہوتا ہے

0
17
بات کہنے کی نہیں تھی خودنمائی ہو گئی
کل تلک جو رازداں تھی اب پرائی ہو گئی
مجنوں نے بھی تنگ آکر اپنی لیلی سے کہا
کل تلک حسنِ اداتھی اب برائی ہو گئی

0
17
لفظ جب کوثر و تسنیم سے دھل جاتے ہیں
میرے محبوب کے لب پر وہ تبھی آتے ہیں
وہ نہیں بولتے جب تک نہ ہو ارشاد خدا
ان کو آتی ہے وحی تب ہی وہ فرماتے ہیں

47
لفظ جب کوثر و تسنیم سے دھل جاتے ہیں
میرے محبوب کے لب پر وہ تبھی آتے ہیں
وہ نہیں بولتے جب تک نہ ہو ارشاد خدا
ان کو آتی ہے وحی تب ہی وہ فرماتے ہیں

57
ہم نے اے مصر کے موسی یہ قسم کھائی ہے
تخت فرعون گرائیں گے تو پھر دم لیں گے
اب کے تجھ سا نہ کوئی آئے گا اے ابن علی
ہم جو کربل کو سجائیں گے تو پھر دم لیں گے
اب جو میدان سجا دیکھ ہی لے گی دنیا
ہم یزیدوں کو بھگائیں گے تو پھر دم لیں گے

37
ہیں رہبر ہمارے نبی کے صحابہ
خدا کے ہیں پیارے نبی کے صحابہ
زمانے نے جن سے ہے پائی ہدایت
وہ روشن ستارے نبی کے صحابہ

48
وہی کمال حسن ہے وہی جمال دل ربا
وہی کمال بے رخی وہی جمال خوش نما
اسی کے اک خیال میں تمام عمر کاٹ دی
اسی کے وصل کی تڑپ کہ جان سے گزر گیا
اسی کی قدر و منزلت کا تھا خیال اب تلک
وگرنہ میں تو کب کا اپنی آن سے گزر گیا

36
میں خود کو دیکھ سکتا ہو ں
مجھے خود سے محبت ہے
اگر یہ بات سچ ہوتی
محبت تم سے میں کرتا
تو پھر میں میں نہیں رہتا
کہ میں تم میں بدل جاتا

60
ہمارے دیس میں آکر
ہمیں ہی دھمکیاں دو گے
ہمیں غدار بولو گے
ہمیں گمنام کر دو گے
تمہارا ظلم آخر کو
تمہاری قبر کھودے گا

30
آج ظالم سے نظریں ملا کر چلو
جرات و استقامت کی رہ پر چلو
زیر دشمن کو کرنا جو ممکن نہ ہو
منہ چھپا کر نہیں جاں لٹا کر چلو
جان تو ایک دن یوں بھی جانی تو ہے
سر جھکا کر نہیں سر اٹھا کرچلو

34