Circle Image

Ghulam Moinuddin Akhtar

@Mghulam03

یہ ترا لطف مرے ساقی نواڑش توبہ
مرے خستہ در و دیوار پہ بارش توبہ
زخم تازہ ہی ہوئے جاتے ہیں اک اک کر کے
وہ کرے ہے یوں مرے درد کی پرشش توبہ
خاک ہی خاک نہ کردے یہ کہیں سارا چمن
آگ سے آگ بجھانے کی یہ کوشش توبہ

0
11
شگفتہ پھول ہو ڈالی میں پھل نکل آئے
کہ اب تو جہد کا نعم البدل نکل آئے
ذرا سا صبر سے جو کام لوگ لینے لگیں
نہ جانے کتنے مسائل کا حل نکل آئے
مرے جنون کی یہ حد کہ چاہتا ہوں میں
ہر ایک پیاس کی ایڑی سے جل نکل آئے

0
17
۔۔۔۔۔طرحی غزل۔۔۔۔۔
دل پہ اس کی ہی حکمرانی ہے
جس کا ہمسر نہ کوئی ثانی ہے
یاد تم کو مری کہانی ہے
مہربانی ہے مہربانی ہے
گفتگو کا جسے شعور نہیں

126