مال و جاہ و حسن و ضیا کچھ بھی نہیں
یہ دنیا دھوکے کے سِوا کچھ بھی نہیں
مُفلس کی چھاتی پہ چلے عدل کا تیر
زَردار کے واسطے سزا کچھ بھی نہیں

0
4