ہوا مسافر مسافروں کی ادا مسافر
زمیں پہ خوشبو فلک پہ اڑتی گھٹا مسافر
گئی رتوں کے حسین تحفے سنبھال رکھنا
کہ جس سے قائم بہار تھی وہ چلا مسافر
سنا ہے سنتا ہے رب دعائیں مسافروں کی
ہمارے حق میں بھی کرتے جانا دعا مسافر

0
15