خدا کا دین بچانے حسین نکلے ہیں
یزیدیت کو مٹانے حسین نکلے ہیں
ہے جس زمیں پہ نبی بھی گئے تو روتے تھے
اسی کو خلد بنانے حسین نکلے ہیں
نبی کی آل بھی گھر سے نکل پڑی ہے اب
کیا تھا عہد نبھانے حسین نکلے ہیں
پڑی ہے دیں کو ضرورت محافظوں کی جب
تو اپنا کنبہ لٹانے حسین نکلے ہیں
یزید فاسق و فاجر شرابی تھا عابدؔ
یہی تو سب کو بتانے حسین نکلے ہیں

0
1