سب پہ ظاہر ہو چکا ہے حالِ ناتواں تو ہمارا، مگر کیا
سب کے آخر میں تجھ پر بھی ظاہر ہو گیا میرے یارا، مگر کیا

0
19