سب کی خدمت میں جٹی رہتی ہوں
محنت کرتی میں بٹی رہتی ہوں
قسمت تو بنتی ہے کوشش سے ہی
کیسی کیسی میں ٹوٹی رہتی ہوں
سکھ ہو یا ہو دکھ ہر لمحہ حاضر
ہمت دیتی بھی ڈھٹی رہتی ہوں
چلتی رہتی ہے دنیا تو باہر
بس باورچی جیسی کٹی رہتی ہوں
اپنے گن سے سسرالی گھر میں بھی
پر پاتی درجہ بیٹی رہتی ہوں
ہو بیٹے کا پیدائش دن ناصر
گھر پر ہی لیکر چھٹی رہتی ہوں

0
32