تیرا نام آتا ہے میرے دل کی دھڑکن میں
کاش میرا نام آئے تیرے دل کی دھڑکن میں
تیرے دل کی دھڑکن نے قید کر لیا مجھکو
ہاتھ رکھ دیا جبسے تیرے دل کی دھڑکن میں
دل مرا دھڑکتا ہے تیرے نام کی دھڑکن
نام لکھ دیا جبسے تےرا دل کی دھڑکن میں
جب کبھی اکیلے میں تیری یاد آتی ہے
قہر برپا رہتا ہے میرے دل کی دھڑکن میں
رک بھی جاتی ہیں اکثر تیز چلنے لگتی ہیں
کیسا کیسا ہوتا ہے میرے دل کی دھڑکن میں
یاد ہوگا وو لمحاں خد سنا تھا نام اپنا
تونے اپنا سر رکھ کر میرے دل کی دھڑکن میں
میرے دل کی دھڑکن مین اب دھڑک نہیں یوسف
رنج چھا گیا کوئی میرے دل کی دھڑکن میں

38