غم کی عادت رہی اداس رہا
چھوڑ کر دنیا اس کے پاس رہا
بے طلب یوں ہوئی پذیرائی
عام ہوتے ہوئے بھی خاص رہا

0
22