لڑ جھگڑ کے کیا برباد شبِ وصل کا لطف
وہ مریضہ تھی دمے کی میں تھا تمباکو نوش

0
20