سینہ میں آگ لگی ہے کیسی
درد کی ٹیس چلی ہے کیسی
عشق سے دوری ہوئی ہے لیکن
بیوفائی بھی رہی ہے کیسی
کام ہمت سے کرے گو جیسے
دیکھ پھر امر ربی ہے کیسی
جائیں لگ گر یہ بگڑنے حالت
جو ٹہل ہو، یہ تبھی ہے کیسی
تحت کس ہو ہنسی ناصر کیسے
اب اسے، وہ خفگی ہے کیسی

0
32