ہمارے دل میں غم بے شمار رہتا ہے
ہمارے سر پر تع جو سوار رہتا ہے
مری اداسی کو چھوڑ اور بتا اتنا
بچھڑ کہ مجھ سے تو بے قرار رہتا ہے

0
72