تارے دامن میں بھرنے ہیں
چاند بھی گھر لے آنا ہے
رات چھت پہ بیٹھ کر
ہسنا بھی ہے مجھے رونا بھی
اُسے سُننا بھی ہے کہنا بھی
افری یہ جو تعلق بن گیا ہے
ترک کرنا ہے یا باقی رہنا بھی

0
42