سمجھ لو محبت کرو گے، مرو گے
مسلسل اگر جو ڈرو گے، مرو گے
نشیلی بہت ہے صنم کی ادا پر
بہک جو گئے تو ادا سے مرو گے
سلیقہ اسے ہے دلوں کو چرا لے
سنو دل بچانا، نہیں تو مرو گے
دراڑیں کہو تم نشاں بھی نہیں ہے
شبہ میں رہو گے شبہ سے مرو گے
چلا جب وطن سے چلا تو ڈھلا دن
خبر تھی ڈھلے دن نکل کے مرو گے
خرم جواد

0
2