سلام ان پر جنھوں نے سنتِ سجاد زندہ کی
سلام ان پر جنھوں نے کربلا کی یاد تازہ کی
سلام ان پر کہ جو ختمِ نبوت کے تھے شیدائی
سلام ان پر کہ جن کی جرآت رندانہ کام آئی
سلام ان پر جنھوں نے مشعلیں حق کی جلائی ہیں
سلام ان پر جنھوں نے گولیاں سینوں پہ کھائی ہیں
سلام ان پر جو جیتے تھے فقط اسلام کی خاطر
جنابِ خواجہء دو سرا کے نام کی خاطر
سلام ان پر کہ جو ختمِ رسالت کے تھے پروانے
سلام ان پر کہ جن کی غیرتِ ایمان تھی زندہ
سلام ان پر قیامت تک ہے جن کا نام پائندہ

37