مل کر دیوار و در ہِلا دو
بوسیدہ ہوا ہے گھر گِرا دو
یہاں کوئی خیر نہیں باقی
سایہ ہے تو جن کو جلا دو
رکھو پھر سے اک بنیاد نئی
سارے در ہی اونچے بنا دو
افری بھلا ہو میرے گھر کا
چاہے جو خیر اسے دُعا دو

37