یہ پھول چہرہ حسین آنکھیں
ملیں تجھے دل نشین آنکھیں
مجھے تو مجنوں بنا گئی ہیں
دکھا کے جلوہ مَہِین آنکھیں
اٹھا کے پلکیں گھما کے نظریں
نہ ڈال مجھ پر متین آنکھیں
جو مجھ سے پوچھو گواہی دوں گا
یہی ہیں قابل یقین آنکھیں
دکھائی دیتی ہیں مجھ کو میرے
یسار آنکھیں یمین آنکھیں
مرے تو دل کا قرار ہیں یہ
نشیلی پلکیں ثمین آنکھیں
تمھارے حصے میں آئیں ساغر
بڑی نرالی ذہین آنکھیں

0
236