یقیں کامل تھا مجھ کو مان جائیگا منانے سے
عجب رونق سی چھائی ہے ترے محفل میں آنے سے
کہیں ہیں قہقہے چھائے کہیں ہے نکہتِ گل بھی
کھِلیں گلزار و گلشن آپ کے ہی مسکرانے سے
گلستاں بھی بہاروں سے مہک جائے بے موسم ہی
ہنگامِ گل سا برپا ہو تمھارے چہچہانے سے
ہے لالہ زار کی رونق کسی کے دم پہ جو قائم
شِگوفہ زار بھی تزئین پائے جگمگانے سے
چمن آباد ناصؔر اور گہوارہ ہو خوشیوں کا
محبت ہی یہاں چھلکے وفا کے آشیانے سے

48