ایک لمحہ کی بھی رہتی خوب قیمت
قدر سے آگاہ ہو کر چھوڑ غفلت
سال یوں ایسے گزرتے ہی رہینگے
بن محاسب، کام میں ہو ہوش و عجلت
بیت جائے وقت نہ پھر ہاتھ آئے
بس عبث بیکار باتیں اور حیرت
لے ورق ماضی پلٹ کر جائزہ بھی
صفحہ آگے کا پلٹنے کی ہو رغبت
دیکھ عالیشان محلوں کی طرف بھی
شاہ کی بکھری پڑی وہ شان و شوکت
جلد بازی پر خطر ناصر ہمیشہ
با شعوری، احتیاطی کی ہو عادت

0
50