تجھ کو پانا پا کر کھونا سیکھ لیا ہے
سچ تو یہ ہے اپنا ہونا سیکھ لیا ہے
تو نے چاہا تیری خاطر ہم نے جاناں
رو کر ہنسنا ہنس کر رونا سیکھ لیا ہے
ڈر تھا کوئی توڑ نہ ڈالے میرے سپنے
اپنے ارماں خود ہی ڈھونا سیکھ لیا ہے
چپ چپ چپ چپ گم سم گم سم اپنے سر کو
بازو اوپر رکھ کر سونا سیکھ لیا ہے
میرے آنسو کوئی نہ دیکھے میں نے ساغر
چھپ کر اپنا چہرہ دھونا سیکھ لیا ہے

0
141