جب سرِ مقتل کسی خود سر کا سر بکتا نہ تھا
سب کے گھر محفوظ تھے کوئی بھی گھر بکتا نہ تھا
لوگ قائم تھے حوادث میں چٹانوں کی طرح
راستہ بکتا نہ تھا عزمِ سفر بکتا نہ تھا
چاند کے ہالے بھی اپنے ساتھ تھے محوِ سفر
کھوٹ کے بازار میں جب راہ بر بکتا نہ تھا

0
64