ستارے گردش ہماری قسمت کے کر رہے ہیں
اشارے معبود کی مشیت کے کر رہے ہیں
حوادثِ دوراں شکریہ ہی تِرا ادا ہو
نہ شکوے بھی پر غمی و مصیبت کے کر رہے ہیں

0
9