بازارِ مصر میں حسن بِکتا ہے۔ ضمیر تو کسی کو دِکھائی بھی نہیں دیتا۔


98