سالگرہ
تمہارا یہ جنم دن ہے چلو کچھ پھول چنتے ہیں
ادھوری آ رزو میں کچھ خوشی کے رنگ بھرتے ہیں
چلو یہ بھلا دیتے ہیں کل ہم سب کہاں ہونگے
کتنے فاصلے پھر سے اپنے درمیاں ہونگے
یہ کنگن ہاتھ کا جو کہتا ہے وہ یاد رکھتے ہیں
ادھوری آ رزو میں کچھ خوشی کے رنگ بھرتے ہیں
تیری باتوں کے جادو میں کچھ کھو سے جاتے ہیں
کچھ پل ہم اک دوسرے کے ہو سے جاتے ہیں
کہانی کے مسافر جیسے رستہ بھول جاتے ہیں
ادھوری آ رزو میں کچھ خوشی کے رنگ بھرتے ہیں
میری سوچ کا محور تیری ذات ہے تم ہو
جو مجھ میں سنایٔ دے تمہاری بات ہے تم ہو
تیرے پہلو میں آ کر ساری دنیا بھول جاتے ہیں
ادھوری آ رزو میں کچھ خوشی کے رنگ بھرتے ہیں
وہ دن بھی آ ئیگا تمہارا ساتھ بھی ہو گا
مہندی لگا یہ ہاتھ ہمارے ہاتھ میں ہو گا
بس اک یہ آرزو دل میں بسا کے جیتے رہتے ہیں
ادھوری آ رزو میں کچھ خوشی کے رنگ بھرتے ہیں

0
32