ہم جیسے پاگل بھی جگ میں گُھومتے ہیں
ابرِ جنوں تلے لیل و نہار جو جُھومتے ہیں
بارہا یہ چاہا کہ بدل لیں ہم خود کو
خود کو بدلنے کے لئے خود کو ڈھونڈتے ہیں

0
51