بنتا ہے مقدر والا ہی مہمان مدینے والے کا
ہوتا ہے کرم خوش بختوں پر ہر آن مدینے والے کا
سرکار کے سچے عاشق کی تاریخ گواہی دیتی ہے
کرتا ہے حکومت دنیا پر دربان مدینے والے کا
باقی نہ رہی دل میں کوئی اس فانی دنیا کی چاہت
ہر عاشق کے سینے میں ہے ارمان مدینے والے کا
ہم فرق نہیں کرتے کوئی قرآن و سنت کے مابیں
فرمانِ خدا ہی ہوتا ہے فرمان مدینے والے کا
دن رات مسلماں آتے ہیں دامن بھر کے لے جاتے ہیں
ہر وقت ہی جاری و ساری ہے فیضان مدینے والے کا
سینے میں یادِ مدینہ ہے ہونٹوں پر اسمِ محمدﷺ ہے
سیفی پر کتنا اعلی ہے احسان مدینے والے

0
13