نعت رسول مقبول ﷺ

11 جنوری 2018

اس جا جبینِ شوق جھکی ہر بشر کی ہے
چھوکھٹ وہ میرے آقا شہِ بحر و بر کی ہے
چومے سنہری جالی ہیں یہ دل کی حسرتیں
دیکھے دیار تیرا تمنّا نظر کی ہے
شاہ و گدا کھڑے ہیں بھکاری بنے ہوئے
"کتنے مزے کی بھیک ترے پاک در کی ہے "
آؤ گناہ گاروں چلو ان کے شہر میں
جنت کو جانے والی سڑک، اس نگر کی ہے
جبریل سر جھکائے کھڑے ہیں ادب کے ساتھ
"فیصل " یہ شان دیکھیے خیر البشر کی ہے
اشعار کی تقطیع
تبصرے