کہرام ہے چمن میں . غم ہے عادل کو

11 جنوری 2018

ہر بات پر جو لوگ دھرنے دیتے ہیں
نہ جانے کیوں کلیوں کو مرنے دیتے ہیں
ہر بات پر بغض و حسد ۔ جن کا کام
مذہب کو وہ بد نام کرنے دیتے ہیں
سوئے ہوئے ہیں دیس کے حاکم دیکھو
بنیادیں دشمن کو کترنے دیتے ہیں
گلشن کے مالی خالی دعوے کرتے ہیں
کیوں خودرو پودوں کو پھلنے دیتے ہیں
کہرام ہے چمن میں. غم ہے عادل کو
کیوں لوگ غنچوں کو دہلنے دیتے ہیں
اشعار کی تقطیع
تبصرے