رباعی

7 دسمبر 2017

کبھی مل کر خفا ہوں گے! کبھی مل کر جدا ہوں گے
وفا کی راہ میں میری طرح وہ بھی فنا ہوں گے
نظر سے جو چھلکتے ہیں ہمیں بے خود بناتے ہیں
بتا ساقی وہ پیمانے ہمیں پھر کب عطا ہوں گے
اشعار کی تقطیع
تبصرے