غزل

6 دسمبر 2017

اک نمائش کی بس کمی ہے
ورنہ آنکھوں میں وہ نمی ہے
صرف جذبوں پہ ہی نہیں ہے
برف جسموں پہ بھی جمی ہے
پاس کچھ بھی نہیں سوائے
اک ملاقات کی خوشی ہے
ایک وہ ہی نہیں پریشاں
شہر کا شہر ہی غمی ہے
اس کے لوٹ آنے تلک احمد
سردی کی لہر اک تھمی ہے
اشعار کی تقطیع
تبصرے