اکرم ناصر کی شاعری

17 جولائی 2017

پہلے اس نے کر کے کوشش مسئلہ پیدا کیا
پھر جو اس نے شور ڈالا اور واویلا کیا
اس نے بھی اپنی طرف سے تو کسر چھوڑی نہ تھی
ہم نے بھی اس سے مگر جوکچھ کیا اچھا کیا
ہر عمل رد عمل رکھتا ہے فطری بات ہے
سوچتے ہو کیا کہ اب ویسا ہوا جیسا کیا
تم کو ہو تکلیف تو تسکین ہوتی ہے اسے
اس نے اس تسکین کے چکر میں سب ایسا لیا
آپ کی مرضی ہے ہم تو کچھ نہیں کہتے میاں
آپ ہی نے توڑ ڈالا آپ نے وعدہ کیا
اشعار کی تقطیع
تبصرے