میری شاعری

آپ کی شائع شدہ شاعری

اس سیکشن میں اپنی شاعری کیسے شائع کریں؟

#موزوں چلو وہ عشق نہیں چاہنے کی عادت ہے

5 دسمبر 2014


چلو وہ عشق نہیں چاہنے کی عادت ہے
پہ کیا کریں ہمیں‌ اک دوسرے کی عادت ہے
تو اپنی شیشہ گری کا ہنر نہ کر ضائع
میں آئینہ ہوں‌ مجھے ٹوٹنے کی عادت ہے
مزید دکھائیں
#موزوں تازہ شعر

5 دسمبر 2014


گرچہ تو نہ تھا قربت کا مارا مگر
تجھ پہ یہ حجت بھی تمام کر آئے
#موزوں ہماری بیاض سے دو شعر

4 دسمبر 2014


وفا کے نام سے نا آشنا جو پیارے ہیں
جفا کے تیر ہمیشہ انھوں نے مارے ہیں
ہمارے چاند کی عادت جو تولہ ماشہ ہے
تبھی تو اپنے بھی گردش میں ہی ستارے ہیں
#موزوں صورت

3 دسمبر 2014


ساری دنیا میں کوئی ایسی صورت ہو
جس کو تنہا ہماری ہی ضرورت ہو
#موزوں تازہ شعر

2 دسمبر 2014


بہت ہو چکا طلسم لبادہ سوزاں
وجود میں حمزہ ہاشمی آئو اپنے
#موزوں غزل

2 دسمبر 2014


نہ کشمکش کا ہوا ختم سلسلہ صاحب
دماغ و دل میں وہی ہے مجادلہ صاحب
کوئی فروخت بھی کر دے کہ راحتیں ہوں نصیب
ہے روز چاہ میں گرنے کا مسئلہ صاحب
مزید دکھائیں
#موزوں تازہ شعر

30 نومبر 2014


مجھے یہ عقل و دل کی کشمکش سمجھ نہیں آتی
کبھی نگہ نہیں رہتی کبھی یقیں نہیں رہتا
#موزوں اللہ کے رسول دہائی ہے آپ کی

29 نومبر 2014


اللہ کے رسول دہائی ہے آپ کی
رب آپ کا ہے ساری خدائی ہے آپ کی
احسان پھر حضور کا مطلوب ہی تو ہے
تو رب ذو الجلال کو محبوب ہی تو ہے
مزید دکھائیں
#موزوں شعر

29 نومبر 2014


کس نے کہا میں رہتا ہوں تنہا
میں تو لبادہ غم زیب تن ہوں
#موزوں میری غزل

29 نومبر 2014


یہ میری زندگی ایسے ہی کچھ عذاب میں ہے
کہ جیسے پھول کوئی رکھ دیا کتاب میں ہے
یوں تو پیارے ہیں سب ہی پھول گلشن میں
ترے لبوں کا تبسم مگر گلاب میں ہے
مزید دکھائیں
#موزوں دل کے خوابوں میں آتی رہی رات بھر

28 نومبر 2014


دل کے خوابوں میں آتی رہی رات بھر
سْونا آنگن سجاتی رہی رات بھر
خوشبو اسکی تخیل پہ چھائی رہی
ٰیاد اسکی ستاتی رہی رات بھر
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

28 نومبر 2014


وہ جب آئیں بولنے پر، ناطقِ طرّار چپ
سب کی اُن کے رو برو ہو طاقتِ گفتار چپ
وہ خفا یوں ہو گئے ہیں، ہو گیا سنسار چپ
ہم نے اُن سے کہہ دیا تھا: ’’چپ رہیں سرکار، چپ‘‘
مزید دکھائیں
#موزوں میری ایک قدرے تازہ غزل ..

28 نومبر 2014


کوئے بتاں میں تیرا نشاں ڈھونڈتے رہے
ہم لامکاں میں ایک مکاں ڈھونڈتے رہے
مسحور اک طلسمِ ندیدہ سے عمر بھر
تھامے چراغ تیرا نشاں ڈھونڈتے رہے
مزید دکھائیں
#موزوں تازہ اشعار کی تقطیع

28 نومبر 2014


شعلۂ جاں کو کچھ ایسے بھی ہوا دیتے ہیں دوست
اپنی آہیں میرے اشکوں میں ملا دیتے ہیں دوست
اعتماد اپنے لکھے پر کچھ مجھے یوں بھی ہوا
پڑھتے پڑھتے بھول جاتا ہوں، بتا دیتے ہیں دوست
مزید دکھائیں
#موزوں دو پہلے کے (ترمیم شدہ)، اور دو تازہ شعر

28 نومبر 2014


شعلۂ جاں کو کچھ ایسے بھی ہوا دیتے ہیں دوست
اپنی آہیں میرے اشکوں میں ملا دیتے ہیں دوست
اعتماد اپنے لکھے پر کچھ مجھے یوں بھی ہوا
پڑھتے پڑھتے بھول جاتا ہوں، بتا دیتے ہیں دوست
مزید دکھائیں
#موزوں وہ راز بن کے رہا دل کے اضطراب میں ہے

27 نومبر 2014


یہ میری زندگی ایسے ہی بس عذاب میں ہے
کہ جیسے پھول کوئی رکھ دیا کتاب میں ہے
وہ غیر محرم اسے فوقیت ہے محرم پر
اسی کا نام سرِورق و انتساب میں ہے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل حاضر خدمت ہے

27 نومبر 2014


شاہ محمد شان از کوئیٹہ۔۔۔۔۔
مجھ کو بے آسرا نہ سمجھو تم
میں سہارے بلا کے رکھتا ہوں
تھام لیتے ہیں باطنی قوت
مزید دکھائیں
#موزوں جب تلک ہوں گی یہ حسینائیں

27 نومبر 2014


جب تلک ہوں گی یہ حسینائیں
سو بُرا کیوں ہوا کرے کوئی