میری شاعری

آپ کی شائع شدہ شاعری

اس سیکشن میں اپنی شاعری کیسے شائع کریں؟

#موزوں بے وفائی

24 ستمبر 2017


غیر سے تم مراسم بڑھاتے رہے
خون آنکھوں سے یاں ہم بہاتے رہے
اپنی تنہائی سے ہم لڑے دیر تک
روٹھ کر خود سے خود کو مناتے رہے
مزید دکھائیں
#موزوں بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا

24 ستمبر 2017


بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا
زمانہ بھول بیٹھا ہے وفا کیا
ہمیشہ دوسروں پر ہنسنے والوں
کبھی دیکھا نہیں ہے آئینہ کیا
مزید دکھائیں
#موزوں بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا

24 ستمبر 2017


بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا
زمانہ بھول بیٹھا ہے وفا کیا
ہمیشہ دوسروں پر ہنسنے والوں
کبھی دیکھا نہیں ہے آئینہ کیا
مزید دکھائیں
#موزوں بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا

24 ستمبر 2017


بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا
زمانہ بھول بیٹھا ہے وفا کیا
ہمیشہ دوسروں پر ہنسنے والوں
کبھی دیکھا نہیں ہے آئینہ کیا
مزید دکھائیں
#موزوں بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا

24 ستمبر 2017


بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا
زمانہ بھول بیٹھا ہے وفا کیا
ہمیشہ دوسروں پر ہنسنے والوں
کبھی دیکھا نہیں ہے آئینہ کیا
مزید دکھائیں
#موزوں بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا

24 ستمبر 2017


بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا
زمانہ بھول بیٹھا ہے وفا کیا
ہمیشہ دوسروں پر ہنسنے والوں
کبھی دیکھا نہیں ہے آئینہ کیا
مزید دکھائیں
#موزوں بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا

24 ستمبر 2017


بتائے گا کوئی یہ ماجرا کیا
زمانہ بھول بیٹھا ہے وفا کیا
ہمیشہ دوسروں پر ہنسنے والوں
کبھی دیکھا نہیں ہے آئینہ کیا
مزید دکھائیں
#موزوں لکھا جب کربلا کا حال میں نے

24 ستمبر 2017


غموں کی دھن کے ایسے راگ نکلے
کہ جیسے نغمگی سے آگ نکلے
لکھا جب کربلا کا حال میں نے
قلم سے کیوں لہو کے جھاگ نکلے
#موزوں سلام

24 ستمبر 2017


ہماری سوچوں میں رہتا ہے لفظ تشنہ لبی
ہماری ذات کا حصّہ ہے لفظ تشنہ لبی
جو پھیل جائے تو تفسیرِ کربلا ہے یہی
سمٹ کے ظلم کا نوحہ ہے لفظ تشنہ لبی
مزید دکھائیں
#موزوں غزل ۔۔ آب و آتش ہیں کشاکش، پُر کَشِش ہے زندگی

24 ستمبر 2017


غزل
آب و آتش ہیں کشاکش، پُر کَشِش ہے زندگی
پُر سکوں ہو جائے تو پھر بے کَشِش ہے زندگی
سرد لہجے کی تھکن سے منجمد ہیں دھڑکنیں
مزید دکھائیں
#موزوں تین اشعار (بعد نظرِ ثانی)

24 ستمبر 2017


مرے یارو، مرے پیارو! ارے میرا کہا مانو
کہیں دیکھا ہے کیا مجھ کو؟ مجھے تم اب مَرا جانو
مرے پیارے نہ مل پائے ستارے جو مقدّر کے
یہ باتیں ہیں نصیبوں کی، اسے اپنا لِکھا مانو
مزید دکھائیں
#موزوں احباب کی خدمت میں ایک غزل پیش ہے ، امید ہے اپنی قیمتی آرا سے نوازیں گے

24 ستمبر 2017


الزام مجھ پہ رکھ کے جو محوِ فتور تھا
یہ علم تھا اسے ہی کہ میں بے قصور تھا
جس شوخ کی اداؤں میں شامل غرور تھا
"اس شوخ کو بھی راہ پہ لانا ضرور تھا "
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

23 ستمبر 2017


ان کی چوکھٹ پہ مرے سر کو جھکا رہنے دے
کر رہا ہوں میں قضاؤں کو ادا رہنے دے
کر رہا ہے وہ وفاؤں پہ جفا رہنے دے
میں برا ہوں تو مجھے یار برا رہنے دے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل ے

23 ستمبر 2017


ان کی چوکھٹ پہ مرے سر کو جھکا رہنے دے
کر رہا ہوں میں قضاؤں کو ادا رہنے دے
کر رہا ہے وہ وفاؤں پہ جفا رہنے دے
میں برا ہوں تو مجھے یار برا رہنے دے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

23 ستمبر 2017


یونہی دل یہ فدا نہیں ہوتا
گر اشارہ ترا نہیں یوتا
گر میں حق آشنا نہیں ہوتا
دل میں خوفِ خدا نہیں ہوتا
مزید دکھائیں
#موزوں میں نے غموں سے یاری کر رکھی ہے

23 ستمبر 2017


میں نے غموں سے یاری کر رکھی ہے
خوشیوں پہ وحشت طاری کر رکھی ہے
مجھے جنگلوں سے بھلا ڈر کیسا
تنہائی کی اچھی خاطر داری کر رکھی ہے
#موزوں غزل

23 ستمبر 2017


ممکن ہے مرے خواب میں جب تو نہیں آتی
پھر نیند بھی مجھکو کوئی پہلو نہیں آتی
پہلے یہ مہک اٹھتے تھے دیوارو در آنگن
اب خط سے ترے پیار کی خوشبو نہیں آتی
مزید دکھائیں
#موزوں آئی صدا عباس کی

23 ستمبر 2017


نہر سے آئی صدا جب حضرتِ عباس کی
اپنے ہاتھوں سے کمر کو شاہِ دیں نے تھام لی
رو کے زینب سے کہا رہوار لا دو اے بہن
رو رہے تھے شاہِ دیں اور ہاتھ میں تلوار تھی
مزید دکھائیں