میری شاعری

آپ کی شائع شدہ شاعری

اس سیکشن میں اپنی شاعری کیسے شائع کریں؟

#موزوں دل سے دل آشنا نہیں ہوتا (غزل)

27 جولائی 2017


دل سے دل آشنا نہیں ہوتا
ہم سے کیوں حق ادا نہیں ہوتا۔
اک خدا ہے مگر بغیر اس کے
کوئی مشکل کشا نہیں ہوتا۔
مزید دکھائیں
#موزوں کام ہم ایسے کر گئے ہوتے

27 جولائی 2017


کام ہم ایسے کر گئے ہوتے
بن کے خوشبو بکھر گئے ہوتے
منتشر قافلہ نہ ہوتا کبھی
ساتھ اہلِ نظر گئے ہوتے
مزید دکھائیں
#موزوں تم کو دیکھا تو مجھ کو کیا ہو گیا (غزل)

27 جولائی 2017


تم کو دیکھا تو مجھ کو کیا ہو گیا
عشق کا جا ری سلسلہ ہو گیا
جب وہ بیمار عشق کو آئے
ان کے دیدار سے دوا ہو گیا
مزید دکھائیں
#موزوں تیرے دیدار کی حسرت کو میں پوری کر لوں (غزل)

27 جولائی 2017


تیرے دیدار کی حسرت کو میں پوری کر لوں
تم عطا جو بھی کرو اس کو میں جھولی بھر لوں
خط تمھارا جو مرے پاس یوں لے کر آئے
ایسے محسن کو میں لوں ایسا ہی نامہ بر لوں
مزید دکھائیں
#موزوں اشعار

26 جولائی 2017


تاریخ لکھنے والوں نے تاریخ بیچ دی
جب کچھ نہیں ملا تو مری چیخ بیچ دی
اندر ملے تو مدح و ستائش سے تربتر
باہر گئے تو شیخ نے توبیخ بیچ دی
#موزوں غزل

26 جولائی 2017


کوئی سیدھی سادھی ناری لگتی ہے
مجھ کو میری جاں سے پیاری لگتی ہے
اک اداکارہ بھی ہے وہ جان لو
آج کل وہ جو تمھاری لگتی ہے
مزید دکھائیں
#موزوں بزم غزل میں کہی گئی غزل

26 جولائی 2017


ان کے گھر آنے جانے سےکیا فائدہ
سب کی نظروں میں آنے سے کیا فائدہ
دل پہ بجلی گرانے سے کیا فائدہ
اپنا گھر خود جلانے سے کیا فائدہ
مزید دکھائیں
#موزوں بزم غزل میں کہی گئی غزل

26 جولائی 2017


کون سمجھے تری نظروں کے ارادے توبہ
ہائے آداب محبت کے تقاضے توبہ
ہیں ہمہ وقت محبت کےنظارے توبہ
زندگی تیرے بِنا کون گزارے توبہ
مزید دکھائیں
#موزوں بزم حسان میں کہا گیا کلام

26 جولائی 2017


ان کے دیارِ قدس میں جانے کو جی کرے
ان کی ہی نعت ان کو سنانے کو جی کرے
آنکھوں کو طورِ سینہ بنا نےکو جی کرے
تقدیر سوئی اپنی جگانے کو جی کرے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

26 جولائی 2017


عشق کی آگ میں جو جلتا ہے
ہو کے کندن وہی نکلتا ھے
عشق کی راہ پر جو چلتا ہے
گرتے گرتے وہی سنبھلتا ہے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

26 جولائی 2017


نہیں کوئی شکوہ رقیب سے
مجھے ہے گلہ تو نصیب سے
میں ہی خود سیاہ نصیب ہوں
یوں گزر گیا ہوں قریب سے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

26 جولائی 2017


تیرے دیدار کی حسرت کو میں پوری کر لوں
تم عطا جو بھی کرو اس کو میں جھولی بھر لوں
خط تمھارا جو مرے پاس یوں لے کر آئے
ایسے محسن کو میں لوں ایسا ہی نامہ بر لوں
مزید دکھائیں
#موزوں ؐبنادو

25 جولائی 2017


یہ چنچل ہوا کو خماری بنا دو 
کوئی شام ایسی سہانی بنا دو 
رہا ہوش اب نا کسی کام کا ہے 
نگاہیں اٹھا کر شرابی بنا دو 
مزید دکھائیں
#موزوں قطعہ

24 جولائی 2017


ہمارے قد کو بلندی سے دیکھنے والے
زمیں پہ آؤ نئی کہکشاں دِکھائیں گے
جو اعتبار کی دہلیز تک گیا ہی نہیں
محل وفا کا ہمیں آج وہ دکھائیں گے
#موزوں آبادی

24 جولائی 2017


واٹس آپ اور فیس بک کا دور ہے یہ دوستو
رک گئیں دنیا میں سارے ملکوں کی آبادیاں
ایک گھر میں ایک بچہ مشکلوں سے ہوتا ہے
میرا نمبر میرے گھر میں آتا ہے اکیسواں
#موزوں غزل

24 جولائی 2017


چاند تھا ،حسنِ یار تھا ،کیا تھا
وہ تھے ، انکا خمار تھا ،کیا تھا
وہ نہیں تھے فقط تھا ذکر انکا
خوشبو کا اک حصار تھا، کیا تھا
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

24 جولائی 2017


اک موڑ پہ تم بیٹھو، اک موڑ سنبھالیں ہم
اس طرح سے دنیا کی ، تصویر سدھاریں ہم
اک ہاتھ میں خنجر ہے، اک آنکھ میں آنسو بھی
خنجر کو کریں نابود، آنسو کو مٹائیں ہم
مزید دکھائیں
#موزوں چلا جاؤں گا

24 جولائی 2017


جی پاؤں گا کیسے تیری محفل کو چھوڑ کر
شکن کیوں جبین پہ ہے پھر ہم کو دیکھ کر
دعا میری ہے یہ تم سلامت رہو یہاں
چلا جاؤں گا زمانے کو روتا چھوڑ کر